Home / Uncategorized / Haalim Episode 18 by Nemrah Ahmed

Haalim Episode 18 by Nemrah Ahmed

First of all Haalim Episode 18 by Nemrah Ahmed complete episode u can read online and download on urdu digest online. Halim is written by Nemrah Ahmed. The story is based on politics, love and time travelling.

As we know halim  by Nemrah Ahmed is written on different subject so its based on fantasies. Finally someone is daring to write at different subject in Pakistan.

Haalim Episode 18 by Nemrah Ahmed

So The word Haalim is an Arabic word and it means “A Dreamer”. Also, As It’s a long novel with episodes and each episode will have a separate title, like Namal.

Furthermore I would say no more and ask you to keep your fingers crossed for Haalim and Haalim’s dreams. Also, For its the most different and unique thing I have ever written, or has ever been written in Khawateen Digest.

 

Haalim Episode 18

Haalim Episode 18 by Nemrah Ahmed

تالیہ مراد پہلی قسط سے اس کوشش میں تھی کہ وہ اس راستے کو چھوڑ دے اور داتن کو پہلی قسط سے یہ خوف تھا کہ ایک دن وہ پکڑے جائیں گے. جب ہم کوئی کہانی لکھتے ہیں تو اس میں ایک “تنازعہ” رکھتے ہیں اور تمام حالات اس تنازعے کے حل کی طرف بڑھائے جاتے ہیں۔

تالیہ کی خزانے کی تلاش اسی ایک مقصد کے لیے شروع ہوئی تھی کہ اس کو اپنے ماضی سے چھٹکارا مل جائے ۔  حالم کی ساری کہانی تالیہ کے اسی تنازعے کے اردگرد گھومتی ہے۔ اس راستے کو چھوڑنے کی کوشش اور بالآخر پکڑے جانا.  لیکن اب اس کو نئی زندگی شروع کرنے کا ایک چانس ملا ہے۔  تالیہ کو ہمیشہ لگتا تھا کہ بس وہ ایک آخری کون گیم کھیلے گی اور پھر وہ اس راستے کو چھوڑ دے گی۔ مگر حالات اس نہج پہ آتے ہیں کہ یہ آخری کون گیم اسے صوفیہ رحمن کی طرف سے کھیلنے کو کہا جاتا ہے اور اس کے بعد اسے معافی مل جائی گی۔  (کیا واقعی؟)حالم کی ساری کہانی اس آخری کون گیم کی طرف جا رہی تھی۔

اب آتے ہیں کراس اوور کی طرف۔

Haalim Episode 18 by Nemrah Ahmed

کراس اوور پاپولر کلچر میں کسی ڈرامے یا ناول کی ایسی قسط کو کہا جاتا ہے جس میں رائٹر ایک قسط کے لیے کسی دوسری کہانی کے کردار کو لاتا ہے۔  یہ  ون وے کراس ہے یعنی جہان سکندر حالم میں آئے گا، مگر حالم جہان سکندر کی کہانی میں نہیں جائے گا کیونکہ جنت کے پتے کی کہانی ختم ہو چکی ہے۔ کراس اوور میں جب ایک کردار مہمان اداکار کی طرح کسی دوسری کہانی میں آتا ہے تو یاد رکھیے، اس کا اپنا کردار کبھی متاثر نہیں ہوتا نہ اس کی کہانی بدلتی ہے(جیسے جہان کی) لیکن جس کہانی کے اندر وہ داخل ہوتا ہے اس پہ اپنا اثر چھوڑ کے جاتا ہے۔ جہان سکندر حالم کی کہانی کو افیکٹ کرنے آئے گا ایک قسط کے لیے اور واپس چلا جائے گا لیکن اس کی آمد کی وجہ آپ قسط پڑھ کے ہی جان پائیں گے۔

Haalim Episode 18

مجھے کوئی کہہ رہا تھا کہ کراس اوور انڈین ڈراموں میں ہوتے ہیں۔ خیر اب آپ کراس اوورز کی توہین نہ کریں۔ جس نے صرف انڈین دیکھے ہیں ان کو معلوم نہیں ہوگا کہ یہ ان سے پہلے مغربی ڈراموں کا ٹرینڈ ہے اور بہت پاپولر ہے اور مجھے خود بھی بہت پسند ہے۔  نمرہ احمد ویسے ہی ایک رسک ٹیکر رائٹر ہے۔ میں باکس میں رہ کے نہیں سوچتی۔ میں ایسے خطرات لینے کی بہت شوقین ہوں۔  ٹرسٹ می اگر میں نے لوگوں کی خواہشات پہ لکھنے کی عادت ڈالی ہوتی تو میں ایک ناول بھی نہ لکھ پاتی۔ انسان کو خود پہ اتنا یقین ہونا چاہیے کہ اگر وہ کوئی رسک لے تو اس کو احسن طریقے سے سر انجام دینے کا حوصلہ بھی رکھے۔

میں دیکھ رہی ہوں کہ ۹۵ فیصد لوگوں کو کراس اوور بہت پسند آرہا ہے اور پانچ فیصد لوگ اس کے خلاف ہیں۔ ٹرسٹ می اگر پچانوے فیصد لوگ اس کے خلاف ہوتے تب بھی میں نے اسے ایسے ہی کرنا تھا۔

Halim Episode 18

😂 کیونکہ رائٹرز کو عمومی خواہشات پہ نہیں لکھنا ہوتا۔ کیا ساری عمر ہم نے اسٹیریوٹائپ ناول لکھنے ہیں ؟.  کیا ہم نے رسک نہیں لینے؟ ساری عمر ڈرتے رہنا ہے؟ اپنے اپنے کیرئر میں رسک لینے کی عادت ڈالیں۔ احتیاط سے پلاننگ کریں اور پھر محنت کریں تو ان شاءاللہ سب خیر ہی رہتی ہے۔ پاکستان میں کوئی رائٹر کراس اوور کا رسک نہیں لیتا۔ میں لینا چاہتی ہوں کیونکہ یہ حالم کی ضرورت ہے۔ اور میں اسے لکھنا بہت انجوائے کر رہی ہوں۔ اور مجھے .کچھ لوگ پریشانی سے کہتے ہیں کہ کہیں جہان کا کردار خراب نہ ہو. ،کہیں یہ نہ ہو جائے کہیں وہ نہ ہو جائے۔ اتنے ڈرتے کیوں ہیں آپ یار؟  زندگی میں اگر آپ ہر چیز کے لیے اتنا ڈریں گے تو وہیں کھڑے رہیں گے جہاں سے آگے بڑھنے کی ضرورت ہے۔ جہان کی کہانی تو ختم ہو چکی ہے۔اب دیکھنا یہ ہے

کہتالیہ کی کہانی پہ وہ کیا اثر ڈال کے جاتا ہے۔ رہا ایک سوال کہ تالیہجاتے وقت اپنے دوستوں سے مل کے کیوں نہیں گئی تو وہ کیسے مل سکتی تھی ان س. تالیہ کچھ نہیں بھولتی بالخصوص یہ بات کہ اس کا کوئی دوست اس کی مدد کے لیے نہیں آیا تھا۔ یہ بات تالیہ کو ہرٹ کر رہی ہے۔ خیر اس کے بارے میں آپ آگے پڑھں گے۔

Haalim Epi 18

اچھا مجھے کراس اوور کے لیے اتنی فرمائشیں آ رہی ہیں کہ اس میں جنت کے پتے کے دوسرے کردار بھی ڈالو. مگر جیسے میں نکتہ چینی کرنے والوں کی نہیں سنتی ویسے ہی میں مداحوں کی خواہشات پہ بھی نہیں لکھ سکتی۔ یہ صرف جہان سکندر کا کراس اوور .  اس میں دوسرا کوئی کردار ڈالنا حالم کی ضرورت نہیں ہے۔ رہا جہان تو میں نے تالیہ کا کردار جہان کے نقش پہ تخلیق کیا تھا ہمیشہ سے۔ فرق ہے تالیہ کا ہنس مکھ پن جو جہان میں نہیں ہے۔

وہ جتنی جہان جیسی ہے اتنی ہی مختلف بھی ہے۔ آپ دوبارہ سے کبھی حالم پڑھیں تو آپ کو اندازہ ہوگا کہ میں نے بار بار کور اسٹوری اور کہانیاں گھڑنے  والے الفاظ کیوں استعمال کیے تھے۔
حالم کی یہ اگلی قسط اکتوبر کے آخر تک آئے گی۔ اس سے پہلے نہیں۔ یاد رکھیے جو قسط کل آپ نے پڑھی ہے یہ ڈائجسٹ کی ایوریج قسط سے تین گنا بڑی تھی۔ اتنی بڑی اقساط کے باعث ان کو لکھنے میں وقت لگتا ہے۔ اور اس قسط کا تو ویسے بھی انتظار کرنا بنتا ہے۔

نمرہ احمد

About Admin

Check Also

dil ki dharkan ho tum episode 4

Dil Ki Dharkan Ho Tum By Farwa Mushtaq Episode 3

Dil Ki Dharkan Ho Tum By Farwa Mushtaq Episode 3 Dil Ki Dharkan Ho Tum …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *